آہ۔۔۔ میرا بھاٸی میرا محسن۔۔۔۔!!!
موت سمجھاتی ہے کہ اپنوں کی جداٸی کیا ہوتی ہے۔۔۔موت جیتی اور زندگی ہار گٸی۔۔۔اس نے ایک طویل جنگ کی لیکن آخر کب  موت کے پہلوان سے مقابلہ کرپاتا۔۔۔ہرا دیا موت نے۔۔۔ایک درد مند اور طاقت ور دل رکھنے والے انسان کو درد دل نے ہی مار دیا۔۔وہ جو کبھی ہار نہ مانتا تھا۔۔۔ہار گیا زندگی کی لڑاٸی۔۔۔کیا دکھایا موت کے فرشتے نے کہ اف  بھی نہ کی۔۔۔حیرت ہے کہ وہ اتنی آسانی سے مان گیا۔۔۔درد دل کے لیے شفا خانہ بھی کیا چُنا۔۔۔۔”قبر“۔۔۔۔۔شاید اب دنیا کے شفا خانوں سے اس کا اعتماد اٹھ چکا تھا۔۔۔کمال ہے میرے بھاٸی میرے محسن کیا قبر  بھی کوٸی شفا خانہ ہے۔۔۔

          حسن توحیدی

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here